Ablution Causes Forgiveness of Sins

یمحواللہ الخطایابالوضوء

Ablution Causes Forgiveness of Sins

وضو کرناگناہوں کے معاف ہونے کا ذریعہ ہے


Hadith in English, Urdu & Arabic


Conversation for deletion of mistakes and sins and promotion to higher stages (in Faith) by making complete Ablution when it becomes hard to do (specially, with cold water in winters). Abu Hurairah (Razi Allaho Anho) narrates that, truly, Holy Prophet ﷺ said, “Should I not inform you (emphasizes the importance) regarding the deeds by which Allah deletes all the mistakes (sins) and promotes you to the high stages of (Paradise or closer to Him)?” Those are making ablution in a good manner when it is hard to do (specially, with cold water in winters) and walking a lot of steps towards Masajid (for collective prayers) and waiting for (collective) prayers (Salat) after one another. This is ‘Arribat’ (repeated thrice, means Border, he is like a soldier using ablution and salat as weapons on the border, and protecting from the attacks of the enemy) .” Abu Hatim (a Scholar) said, “Arribat means the protector from sins because ablution protects (from or deletes) the sins.” (Sahih Ibn e Habban). (Shoaib Alurnwoot said) Asnad (chain of narrators) of this hadith is correct as per the criteria of Muslim.“ (also, Mota 1/76, Musnid Ahmad 2/277 and 303, Sahih Muslim 251 asd Nisay 1/89 and Ibn Khuzaymah 5)

ذكر حط الخطايا ورفع الدرجات بإسباغ الوضوء على المكاره(ذکر خطاؤں کے مٹنے کا اور بلندی درجات کا کامل وضوء کرنے پر جب گراں ہو(طبیعت پر

أخبرنا الفضل بن الحباب الجمحي بالبصرة، حدثنا القعنبي، عن مالك، عن العلاء بن عبد الرحمن، عن أبيه عن أبي هريرة، أن رسول الله، صلى الله عليه وسلم، قال: “ألا أخبركم بما يمحو الله به الخطايا ويرفع به الدرجات؟ إسباغ الوضوء على المكاره، وكثرة الخطا إلى المساجد، وانتظار الصلاة بعد الصلاة، فذلكم الرباط، فذلكم الرباط، فذلكم الرباط” ۔قال أبو حاتم: معناه الرباط من الذنوب، لأن الوضوء يكفر الذنوب, صحیح ابن حبانؒ

ترجمہ۔ حضرت ابو ہریرۃ (رضی اللہ تعالیٰ عنہ) سے روایت ہے کہ ،بےشک رسول اللہ نے ارشاد فرمایا ،” کیامیں خبر نہ دوں آپ کو کہ جس (عمل)سے مٹا دیتا ہے اللہ تعالیٰ خطاؤں کو اور بلند کردیتا ہے جس کی وجہ سے درجات کو؟ (وہ ہے) اچھی طرح (سنت کے مطابق) وضوء کرنا جب کہ وہ (طبیعت پر) گراں (مشکل)محسوس ہو، اور کثرت سے قدم اٹھانا مساجد کی طرف (نماز کے لئیے) اور انتظارکرنا ایک نماز (پڑھنے ) کے بعددوسری نمازکا ، پس یہی “الرباط “ہے، پس یہی “الرباط (سرحد ہے ، گویا وہ گناہوں کے مقابلے میں وضوء نماز وغیرہ کو ہتھیار کے طور پر ایسے استعمال کرنے والا ہے جیسے مجاہد سرحد پر، اور وہ دشمن کے حملہ سے بچاتاہے )” ہے، پس یہی “الرباط “ہے”۔کہا ابو حاتم ؒ نے معنی ہے اس(الرباط) کے بچانے والاہےگناہوں سے، کیوں کہ بے شک وضوءمٹادیتاہے گناہوں کو۔(صحیح ابن حبانؒ) (شعیب الارنؤوط نے کہا )اسناد(راوی ) اس (حدیث) کے صحیح ہیں مسلم ؒ کی شرط پر ۔اورمؤطامیں 1/176،مسند احمد 2/277پر اور 303،مسلم میں 251، نسائی میں 1/89پر اورابن خزیمہ میں 5نمبرپربھی منقول ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *