Direction in Toilet Towards Qibla is Prohibited

الاستقبال والاستدبار الی القبلۃ ممنوع فی الحمام

Direction in Toilet Towards Qibla is Prohibited

رفع حاجت کے وقت قبلہ کی طرف منہ نہ کرنا


Hadith in English, Urdu & Arabic


Abu Ayub Alansari (Allah pleased with him) narrates that Holy Prophet ﷺ said, “When ever you go into toilet in order to urinate, neither face towards Qiblah (Kaaba) nor your back, but you should face towards the East or the West (because in Medina City, Qiblah is towards the North, from Pakistan, it is towards the West). Abu Eesa (Imam Trimzy) said, “Hadith narrated by Abu Ayub Alansari (Allah pleased with him) is the most beautiful thing (narration) in this chapter and is the most correct.” Sheikh Albani said, ” (this hadith is) Correct”. (Al-Tirmidhi hadith No 8)

عن أبي أيوب الأنصاري قال : قال رسول الله صلى الله عليه و سلم إذا أتيتم الغائط فلا تستقبلوا القبلة بغائط و لا بول و لا تستدبروهاو لكن شرقوا أو غربوا۔۔۔قال أبو عيسى حديث أبي أيوب أحسن شيء في هذا الباب و أصح۔۔۔قال الشيخ الألباني : صحيح۔ الترمذیؒ

ترجمہ۔ حضر ابو ایوب انصاری (رضی اللہ تعالیٰ عنہ) سے روایت ہے کہاکہ، ارشاد فرمایا رسول اللہ ﷺ نے ،”جب تم آؤ رفع حاجت کے لئیے تو نہ کرو اپنے رخ قبلہ کی طر ف نہ رفع حاجت کے وقت اورنہ ہی پیشاب کرتے وقت اورنہ ہی پیٹھ کرو اس (قبلہ ) کی طرف ،لیکن تم مشرق یا مغرب کی طر ف منہ کر لو (دراصل مدینہ منورہ سے مکہ شریف شمال کی طرف ہے ،لہذا شمالا جنوبا بیٹھنے سے منہ یا پیٹھ قبلہ کی طرف ہوتی ہے اس لئیے شرقاغربافرمایاہمارے علاقے پاکستان کےلئیے شمالاجنوبا درست ہے جبکہ مغرب میں قبلہ ہے) ،کہا ابوعیسی ٰ (امام ترمذی ؒ ) نے ابو ایوب (رضی اللہ تعالی ٰ عنہ) کی حدیث سب سے خوبصور ت(احسن ) شیء (روایت )ہے اس باب میں اور صحیح ترین (روایت )ہے ۔کہاالشیخ البانی ؒ نے (کہ یہ حدیث)صحیح ہے۔ الترمذیؒ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *