Haq-Mehr is Islam

حق مهر إلزامي في الإسلام ؟

Haq Mehr is Compulsory in Islam

حق مہر اسلام میں لازمی ہے ؟

( HAQ Mehr Islam Main Lazmi Hai

Haq Mehr is Compulsory in Islam


Importance of Mehr in Marriage Hadith “Translation in English, Arabic & Urdu”


Saying of Allah the Exalted (so give them their dowries (It is an evidence that dowry is compulsory in wedding…. Alqrutaby 5/142) as appointed (and Ujoor means dowries …and it is the text that Mehr is named as Ajr… Alqurtaby 5/120) …Annisa 24….and give them their Mehr in a just way… Annisa 25).

قول اللہ تعالیٰ ( فَآتُوهُنَّ أُجُورَهُنَّ ( دليل على وجوب المهر في النكاح۔۔۔القرطبیؒ 5/142) فَرِيضَةً (والأجور المهور، ۔۔۔ وهذا نص على أن المهر يسمى أجرا۔۔القرطبیؒ (5/120 )۔۔۔النسآء 24۔۔۔وَآتُوهُنَّ أُجُورَهُنَّ بِالْمَعْرُوفِ۔۔۔25 النساء) ۔

ترجمہ ۔اللہ تعالیٰ کا فرمان (پس ادا کروان عورتوں کو مہر (یہ دلیل ہے مہر کے واجب ہونے پر نکاح میں۔۔۔ القرطبیؒ 5/142) ان کے مقررکردہ ( اوراجورسے مراد مہور ہیں ۔۔۔اور یہ نص ہے اس پر کہ مہر کا نام اجر رکھا گیا ہے القرطبیؒ 5/120) ۔۔۔ النساء24۔۔۔اورادا کروان عورتوں کو مہر ان کے معروف طریقۃ سے۔۔۔25 النساء)۔ 


What is Haq-Mehr in English, Arabic & Urdu


4751. Anas (Radi Allah o anho) narrates that, Abd ur Rahman bin Owf (Radi Allah o anho) married with a woman by a weight (of gold) of seed. So, Apostle ﷺ saw a cheerfulness of wedding, he asked him about it. He said, I have married a woman by a (portion of Mehr advance) weight (of gold) of seed. (and seed is a weight of five Dirhim…. Weight of seed of gold….Umdat ul Qary 29/338) Narrated Bukhary at no 4751.

4751 – عَنْ أَنَسٍ أَنَّ عَبْدَ الرَّحْمَنِ بْنَ عَوْفٍ تَزَوَّجَ امْرَأَةً عَلَى وَزْنِ نَوَاةٍ فَرَأَى النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بَشَاشَةَ الْعُرْسِ فَسَأَلَهُ فَقَالَ إِنِّي تَزَوَّجْتُ امْرَأَةً عَلَى وَزْنِ نَوَاةٍ ( والنواة زنة خمسة دراهم۔۔۔۔ وزن نواة من ذهب۔۔۔ عمدۃ القاری 29/338)”۔ رواہ البخاریؒ برقم 4751

ترجمہ ۔ 4751 – انس (رضی اللہ عنہ) سے روایت ہے کہ عبدالرحمن بن عوف (رضی اللہ عنہ) نے شادی کرلی ایک عورت سے ایک گٹھلی کے وزن (سونا) کے برابر (مہر) پر ، تو دیکھی رسول اللہ ﷺ نے (ان کے چہرے پر) شادی کی بشاشت، تو پوچھا ان سے (اس بارے میں) تو عرض کی “بے شک میں نے شادی کرلی ہے ایک عورت سے ایک گٹھلی کے وزن (سونا) کے برابر (مہرمعجل) پر ، (اورنواۃ ہے پانچ درہموں کے برابر وزن ۔۔۔۔وزن سونے کی گٹھلی کا۔۔۔ عمدۃ القاری 29/338) “۔ رواہ البخاریؒ برقم 4751۔


What is Haq-Mehr in English, Arabic & Urdu


7507. Memoon Alkurdy narrates from his father that, “I have listened from Apostle ﷺ saying, “A man who married with a woman by a less dowry (Mhar) or more, that he has not intention in his mind to pay her right, deceived her, so, he has died and has not paid her right, would face Allah (Subhnahu) on the day of Judjment as a fornicator (adulterer)”. Narrated Tibrany in (his book) Assaghir and Alosat and all of Narrators are reliable. (Majma Uz Zawaid of Hafiz Alhethamy at no 7507).

7507-وعن ميمون الكردي عن أبيه قال: سمعت رسول الله صلى الله عليه وسلم يقول: “أيما رجل تزوج امرأة على ما قل من المهر أو كثر ليس في نفسه أن يؤدي إليها حقها خدعها فمات ولم يؤد إليها حقها لقي الله يوم القيامة وهو زان”. رواه الطبراني في الصغير والأوسط ورجاله ثقات. (مجمع الزوائد ، للحافظ الهيثميؒ ،برقم 7507)

ترجمہ ۔ 7507- میمون الکردی اپنے اباجان سے روایت کرتے ہیں، کہا کہ، “سنا میں نے رسول اللہ ﷺ کو ارشادفرماتے، جس شخص نے شادی کی عورت سے کم مہر پر یا زیادہ پر ، کہ اس کے دل میں اس کو اس کا حق ادا کرنے کا ارادہ نہیں تھا، اس کو دھوکا د ے دیا، پس وہ مرگیا اور نہیں ادا کیا اس کاحق، تو ملاقات کرے گا اللہ تعالیٰ سے روزقیامت اور وہ زانی (شمار) ہوگا “۔ روایت کی ہے طبرانیؒ نے الصغیر اور الاوسط میں اور راوی اس کے سب ثقہ ہیں۔ (مجمع الزوائد ، للحافظ الهيثميؒ ،برقم 7507)۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *