Instructions about Bleeding and Istihadah

غسل الدم و حکم الاستحاضہ

Instructions about Bleeding and Istihadah

خون کا دھونا اوراستحاضہ کا حکم


1st Hadith about Istihadah with Translation in English, Urdu & Arabic


Hadith No 221: Ayesha (Razi Allah o anha) narrates that Fatimah bint Abi Hubaish (Radi Allah o anha) came to Holy Prophet ﷺ and said, “O Rasoolallah ﷺ, I am a woman suffering from excess of ‘Istihaz‘ (blood after period of menstruation), may I keep salat discontinued? He answered, “No, that is only a vein and not menstruation. So, when the period of menstruation starts, you should leave salat, and when it ends, you should wash the blood (from your body and clothes) and then offer salat. (A narrator Hasham) Said that his father said (narrating), “Perform ablution (new) for each salat and till the next menstruation period is started.” (Narrated Bukhari and at no 295, 319, and Al-muslim at no 501, 502, 503, 505 and Annisay, at no 219, 359, 366, 367, and Ibn e Majah at no 282, and about narrations of these three Sheikh Albany said, “Correct”, and Ahmad bin Hanbal ant no 25663, Taleek of Shoaib Alurnwoot is, “Chain of narrators is correct as per criteria of both Sheikhs (Bukhary and Muslim), and Addarmy, at no 774, 779 , Hussain Salim Asad said, “Chain of narrators is correct”.

عن عائشة قالت جاءت فاطمة بنت أبي حبيش إلى النبي صلى الله عليه وسلم فقالت يا رسول الله إني امرأة أستحاض فلا أطهر أفأدع الصلاة فقال رسول الله صلى الله عليه وسلم لا إنما ذلك عرق وليس بحيض فإذا أقبلت حيضتك فدعي الصلاة وإذا أدبرت فاغسلي عنك الدم ثم صلي قال وقال أبي ثم توضئي لكل صلاة حتى يجيء ذلك الوقت (رواہ البخاریؒ وبرقم 295 ،319 والمسلمؒ برقم 501 ،502، 503، 505 والنسائیؒ برقم 219، 359، 366، 367، وابن ماجہؒ 621 وابوداودؒ 282 وفی روایات اصحاب الثلاث قال الشیخ البانیؒ صحیح، واحمدبن حنبلؒ برقم 25663 تعليق شعيب الأرنؤوط : إسناده صحيح على شرط الشيخين والدارمیؒ برقم 774 ، 779 قال حسين سليم أسد : إسناده صحيح)۔

ترجمہ۔  221 عائشۃ (رضی اللہ عنہ) سے روایت ہے کہ فاطمہ بنت ابو حبیش (رضی اللہ عنہا) نبی ﷺ کی خدمت میں حاضر ہوئی، تو عرض کی یارسول اللہ ﷺ میں ایک عورت ہوں جسے استحاض (کی شکایت رہتی) ہے تو میں پاک نہیں رہتی، کیا میں نمازیں چھوڑے رکھوں؟ تو ارشاد فرمایا رسول اللہ ﷺ نے، نہیں یہ ایک رگ ہے اورحیض نہیں ہے، پس جب حیض (کے مقررہ دن) آجائیں تو، تونماز چھوڑدے، اورجب (حیض کے دن) گذر جائیں تو (غسل کرکے بدن اور کپڑوں وغیرہ ) سے (خون) دھو ڈال، پھر نماز پڑھ، کہا (ہشام) نے کہ میرے اباجان نے (روایت کرتے ہوئے ) کہا کہ پھر تو وضوکیا کر ہر نماز کے لیے (نیا)۔ یہاں تک کہ پھر یہی ( دوسرےحیض کا ) وقت آجائے۔ (روایت کی ہے البخاریؒ نے نمبر 295 ،319 پر اورالمسلمؒ نے نمبر 501 ،502، 503، 505 پراورالنسائیؒ نے نمبر 219، 359، 366، 367پر اورابن ماجہ ؒنے نمبر 621 پر اور ابوداودؒنے 282 پر اور ان تینوں اصحاب کی روایات کے بارے کہا الشیخ البانیؒ نےصحیح ہے،اوراحمدبن حنبلؒ نے نمبر 25663 پرتعليق شعيب الأرنؤوط کی ہے کہ إسناداس کی صحيح ہے شيخين (بخاریؒ اور مسلم ؒ ) کی شرط پراورالدارمیؒ نے نمبر 774 ، 779 پر کہاحسين سليم أسد نے اسناداس کی صحيح ہے)۔


2nd Hadith about Bleeding with Translation in English, Urdu & Arabic


Hadith No 126: Adi bin Thabit from his father and he from his grandfather narrates from Holy Prophet ﷺ that verily,he said, “About Mustahadah (woman suffering from continuous bleeding even after period of menstruation) that she may leave salat in the days of menstruation (after the end) she should take bath and (if bleeding continue) she should perform ablution for each salat and fast (of Rmadan) and offer salat.” (Narrated Tirmizi, and Ibn e Majah at no 625 and Abu Dawood at no 297 and about all Sheikh Albani said, “Correct”.

عن عدي بن ثابت عن أبيه عن جده : عن النبي صلى الله عليه و سلم أنه قال في المستحاضة تدع الصلاة أيام أقرائها التي كانت تحيض فيها ثم تغتسل وتتوضأ عند كل صلاة وتصوم وتصلي۔ (رواہ الترمذیؒ وابن ماجہؒ برقم 625،وابوداودؒ برقم 297 وفی کل قال الشیخ البانیؒ صحیح)۔

ترجمہ۔  126 ۔ عدی بن ثابت اپنے ابا سے وہ ان کےداداسے اوروہ نبی ﷺ سے روایت کرتے ہیں کہ “بےشک ، انہوں نے ارشاد فرمایا ، مستحاضہ (جس خاتون کو حیض کے بعد بھی خون جاری رہتاہو) کے بارے میں کہ وہ نماز چھوڑ دے اپنے حیض کے ایام میں ، جس میں ا س کو (عادت ہو کہ ) حیض کا خون آتا ہو، پھر (جب ایام ختم ہو جائیں ) تو غسل کرے اور (استحاض کا خون نہ رکے تو) وضوء کرلیا کرے ہرنماز کے وقت ، اور روزہ بھی رکھے (رمضان کا) اور نماز بھی پڑھے”۔(روایت کیا ہے اس کو الترمذی ؒنے اورابن ماجہؒ نے نمبر 625 پر اورابوداودؒ نےنمبر پر297 اور ان سب کے بارے کہا الشیخ البانی ؒ نے کہ صحیح ہے)۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *