Maghrib Prayer End Time

انتہاءالوقت لصلاۃ المغرب

Maghrib Prayer End Time

نماز مغرب کا آخری وقت

(Namaz Maghrib Ka Akhri Waqt)


Maghrib Prayer HadithTranslation in English, Arabic & Urdu


Hadith No 536:- Urwah narrates from Aisha (Radi Allahu anhu) that, ” the Apostle ﷺ delayed the congregation of Isha prayer, till Umar (Radi Allah o anho) informed that women and children has slept. He came out and said, “No one is waiting for (Isha) prayer from the residents of the Earth. (and) no one offers prayer today, except inhabitants of Madinah, and he used to offer the Isha prayer from the elimination of sun-glow to the middle of the first one third of the night”. Narrated Al-Bukhari at no 536, 815, 817 and Al-Muslim at no 1008 and Nisay at no 482, 535 and about both narrations Sheikh Albani said, “Correct”, and Ahmad bin Hambal at no 24105, 25849 and about both narrations Taleek of Shoaib Alurnwoot is, “Chain of narrators is correct as per criteria of both Sheikhs (Bukhari and Muslim)”, and Darmy at no 1213, Hussain Salim Asad said, “Chain of narrators is correct and hadith is agreed (by both Bukhari and Muslim).

عَنْ عُرْوَةَ أَنَّ عَائِشَةَ قَالَتْ أَعْتَمَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِالْعِشَاءِ حَتَّى نَادَاهُ عُمَرُ الصَّلَاةَ نَامَ النِّسَاءُ وَالصِّبْيَانُ فَخَرَجَ فَقَالَ مَا يَنْتَظِرُهَا أَحَدٌ مِنْ أَهْلِ الْأَرْضِ غَيْرُكُمْ قَالَ وَلَا يُصَلَّى يَوْمَئِذٍ إِلَّا بِالْمَدِينَةِ وَكَانُوا يُصَلُّونَ فِيمَا بَيْنَ أَنْ يَغِيبَ الشَّفَقُ إِلَى ثُلُثِ اللَّيْلِ الْأَوَّلِ” رواہ البخاریؒ برقم 536 ،815، 817 والمسلمؒ برقم 1008 والنسائیؒ برقم 482، 535 و فی روایتیہ قال الشیخ البانیؒ صحیح، واحمد بن حنبلؒ برقم 24105، 25849 وفی روایتیہ تعلیق شعیب الارنؤوط اسنادہ صحیح علی شرط الشیخین والدارمیؒ برقم 1213 قال حسين سليم أسد : إسناده صحيح والحديث متفق عليه، ۔

ترجمہ ۔ 536 – عروۃؒ سے روایت کہ بے شک کہا عائشۃ (رضی اللہ تعالیٰ عنہا) نے کہ “رسول ﷺ نے ایک دن عشاء کی نماز تاخیر سے پڑھائی یہاں تک کہ عمر (رضی اللہ تعالیٰ عنہ) نے عرض کی سوگئے عورتیں اور بچے، تو آپ باہر تشریف لائے توارشادفرمایا کہ نہیں کوئی انتظار کر رہا اس (عشاءکی نماز) کا زمین کے رہنے والوں میں سے تمہارے سوا کوئی بھی،(پھر) فرمایا اورکوئی نہیں نماز پڑھتا آج کے دن سوائے مدینہ میں (رہنے والوں کے) ،اورآپ نماز ادا فرماتے (عشاء کی) شفق غائب ہوجانےاور رات کے پہلے تہائی حصے کے درمیان”، روایت کی ہے البخاریؒ نے نمبر 536 ،815، 817 پراورالمسلمؒ نے نمبر 1008 پراورالنسائیؒ نے نمبر 482، 535 پراور دونوں روایات کے بارے کہا الشیخ البانیؒ نے کہ صحیح ہے اوراحمد بن حنبلؒ نے نمبر 24105، 25849 پر اوردونوں روایات کے بارے تعلیق شعیب الارنؤوط کی ہے کہ اسناداس کی صحیح ہے شیخین کی شرط پراورالدارمیؒ نے نمبر1213 پر کہا حسين سليم أسد نے کہ إسناداس کی صحيح اورحديث متفق عليه ہے۔

Related Topics:

Initial Time of Maghrib Prayer (Time Limit)

Perform Zuhr Prayer at Cool Time of the Noon

Last Time of Asr Prayer

Rewards of Fajr Prayer in The Morning Light

Timings of Five Prayers

Timing of Fajr and Asr Prayer

Advantages of Prayer Offered in Time

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *