Manners of Making Ablution

صفة الوضوء

Manners of Making Ablution

مسنون وضوء کرنا


Hadith about Ablution with Translation in English, Urdu & Arabic


Hadith No 159: Humran, freed slave of Uthman bin Affan (Radi Allah o anho) informed that, “Verily, I saw that Uthman bin Affan (Radi Allah o anho) has demanded a pot of water from me. He decanted some water on both of his hands thrice, and then washed. After that, he put his hand in the pot (took water) put into mouth and nose. He gargled and cleaned his nose (with water). Then he washed his face thrice and hands up to elbows thrice. Then he rubbed wet hands on his head. Then he washed his feet thrice.” Then he said, I have seen Rasoolullah performing ablution (Wudu) like that of mine” and said, “Who so ever will perform the ablution like this and offered two rakat salat in this way, that his soul did not talk to his heart (he was fully attentive), Allah will forgive his all previous sins.” (Al-bukhari, and No 155) and also narrated Muslim at No. 331, 332 and Annisay, No 85 and 421 and for both Albany said, “Correct” and Aldarmy at No 693. Hussain Salim Asad said, “Chain of narrators is correct.” Taleek of Shoaib Alurnwoot is, “Chain of narrators is correct.”

عَنْ حُمْرَانَ مَوْلَى عُثْمَانَ بْنِ عَفَّانَ أَنَّهُ رَأَى عُثْمَانَ بْنَ عَفَّانَ دَعَا بِوَضُوءٍ فَأَفْرَغَ عَلَى يَدَيْهِ مِنْ إِنَائِهِ فَغَسَلَهُمَا ثَلَاثَ مَرَّاتٍ ثُمَّ أَدْخَلَ يَمِينَهُ فِي الْوَضُوءِ ثُمَّ تَمَضْمَضَ وَاسْتَنْشَقَ وَاسْتَنْثَرَ ثُمَّ غَسَلَ وَجْهَهُ ثَلَاثًا وَيَدَيْهِ إِلَى الْمِرْفَقَيْنِ ثَلَاثًا ثُمَّ مَسَحَ بِرَأْسِهِ ثُمَّ غَسَلَ كُلَّ رِجْلٍ ثَلَاثًا ثُمَّ قَالَ رَأَيْتُ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَتَوَضَّأُ نَحْوَ وُضُوئِي هَذَا وَقَالَ مَنْ تَوَضَّأَ نَحْوَ وُضُوئِي هَذَا ثُمَّ صَلَّى رَكْعَتَيْنِ لَا يُحَدِّثُ فِيهِمَا نَفْسَهُ غَفَرَ اللَّهُ لَهُ مَا تَقَدَّمَ مِنْ ذَنْبِهِ۔ (البخاریؒ وبرقم 1798،155) ورواہ مسلمؒ برقم 331، 332 نحوہ والنسائیؒ برقم 85 ، 421 وفی کلیہما قال الشيخ الألباني : صحيح والدارمیؒ برقم 693 قال حسين سليم أسد : إسناده صحيح و احمدبن حنبلؒ برقم 418 تعليق شعيب الأرنؤوط : إسناده صحيح۔

ترجمہ۔ 159۔ حمران ؒ مولی عثمان بن عفان (رضی اللہ تعالیٰ عنہ )نے خبر دی ہے کہ “بے شک انہوں نے دیکھا عثمان بن عفان (رضی اللہ تعالیٰ عنہ) کو کہ “انہوں نے اس (حمران) سے پانی کا برتن مانگا (اورلے کر) پہلے اپنی دونوں ہتھیلیوں پر تین مرتبہ (پانی ) ڈالا، پس انہیں دھویا، پھر دایاں ہاتھ برتن میں ڈالا (اور پانی لیا) تو کلی اور ناک میں پانی ڈالا اور اس کو صاف کیا ، پھر دھویا اپنا چہرہ تین بار اور اپنے دونوں ہاتھ کہنیوں تک تین بار (دھوئے) ، پھر مسح کیا اپنے سر کا، پھر دھوئے اپنے پاؤں تین بار ، پھر کہا کہ دیکھامیں نےرسول اللہ ﷺ کو وضوء فرماتے میرے اس وضوء کی طرح ، اور فرمایا جس نے وضوء کیا میرے اس وضو ء کی طرح ، پھر پڑھی دو رکعت نماز ، اور دونوں رکعتوں میں اس کے نفس نے اس سے کوئی بات نہ کی (اپنے خیالوں میں باتیں نہ کیں ) تو اللہ تعالیٰ معاف فرمادے گا اس کے تما م پچھلے گناہ ۔” (البخاریؒ اور نمبر 155) اور روایت کی ہے مسلم ؒ نے نمبر 331اور 332 پر اسی طرح ۔اورالنسائی ؒ نے نمبر 85 اور421 پر اوردونوں کے بار ے کہا الشیخ البانیؒ نے ، صحیح ہے۔ اور الدارمی ؒ نے نمبر 693پر کہاحسین سلیم اسد نے ، اسناد اس کی صحیح ہیں، اوراحمدبن حنبلؒ نے نمبر 418 پر اورتعلیق شعیب الارنؤوط کی ہے کہ اسناد اس کی صحیح ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *