Muslims are Moderate Nation

کذالک کنتم امۃ وسطا

مسلمان ایک معتدل امت ہے

Muslims are moderate nation


1). Hadith in Arabic


قول اللہ تعالیٰ{وكذلك جعلناكم أمة وسطا۔۔۔}اللہ تعالیٰ کاقول{ اور اسی طرح بنایا ہم نے تمہیں (امت محمد ﷺ) کو امت معتدل(عدل والی) ۔۔۔} وأخرج أحمد ، وعَبد بن حُمَيد والبخاري والترمذي والنسائي ، وَابن جَرِير وابن المنذر ، وَابن أبي حاتم ، وَابن مردويه والبيهقي في الأسماء والصفات عن أبي سعيد قال : قال رسول الله صلى الله عليه وسلم يدعى نوح يوم القيامة فيقال له : هل بلغت فيقول : نعم ، فيدعو قومه فيقال لهم : هل بلغكم فيقولون : ما أتانا من نذير وما أتانا من أحد ، فيقال لنوح : من يشهد لك فيقول : محمد وأمته فذلك قوله {وكذلك جعلناكم أمة وسطا} قال : والوسط العدل فتدعون فتشهدون له بالبلاغ وأشهد عليكم۔


Urdu Translation


ترجمہ۔اورروایت کیا ہے احمدؒ اور عبدبن حمیدؒ اورالبخاریؒ اورالترمذی اور النسائی اور ابن جریرؒ اور ابن المنذرؒ اور ابن ابی حاتمؒ اورابن مردویہؒ اور البیہقی ؒ نے(اپنی کتاب)الاسماء والصفات میں حضر ت ابو سعید (رضی اللہ تعالیٰ عنہ ) سے کہا کہ فرمایا رسول اللہ ﷺ نے ،”پکارا جائے گا نوح (علیہ السلام) کو روز قیامت ، تو کہا جائے گا ان سے ، کیا پہنچادیا آپ نے (توحید اور احکام الہٰی قوم کو) پس کہیں گے ، جی ہاں ، تو بلائی جائے گی قوم ان کی ، تو کہا جائے گا ان (کی قوم )سےکیا پہنچایا اس (نوح علیہ السلام)نے (پیغام الٰہی ) تمہیں، پس کہیں گے، نہیں آیاہمارے پاس کو ئی ڈرانے والا اورنہ ہی آیا ہمارے پاس کوئی ایک (نبی یاپیغام وغیرہ) پس کہا جائے گا نوح (علیہ السلام )سے کو ن گواہی دیتا ہے آپ کے لئے ، تو کہیں گے(نوح علیہ السلام) محمد(ﷺ) اور امت ان کی (گواہی دے گی ) پس وہ قول ہے ان (اللہ تعالیٰ )کا { اور اسی طرح بنایا ہم نے تمہیں (امت محمد ﷺ) کو امت معتدل ۔۔۔}کہااورالوسط(یعنی مطلب ہے الوسط کا)العدل(اورگواہ عادل ہی ہوتاہے)، پس تمہیں بلایا جائے گاتو تم گواہی دو گے ان کے لئے کہ (نوح علیہ السلام نے پیغام ) پہنچایا دیا۔اور میں(محمد ﷺ) گواہی دوں گاتم پر “۔(تفسیر الدرالمنثور،امام جلال الدین السیوطیؒ)


English Translation


and narrated Ahmad and Abd bin Humaid and Al-bukhari and Al-tirmizi and Alnisaayee and Ibn e Jareer and Ibn al Manzar and Ibn e Abi Hatim and Ibn e Mrdwehe and Albehqee in (his book) Al-Asma wa Sifat by Abu Saeed Khudri (رضی اللہ تعالیٰ عنہ) that Rasoolullah (صلی اللہ علیہ وسلم) said, “Nuh (علیہ السلام) will be called, on the day of Judgment and will be asked from him, if he had conveyed (the message of Allah)?” He will say, “Yes.” Then his nation will be called and will be asked from them, “If he (Nuh علیہ السلام) has conveyed (the message of Allah).” They will say, “No, neither a warner had come to us nor any other (prophet).” Nuh (علیہ السلام) will be asked, “Who is your witness (that you has conveyed the message).” He will answer, “Muhammad (صلی اللہ علیہ وسلم) and his Umah (followers).” These are according to the words (of Allah), “And thus we have made you moderate (standard) nation.” He (further) said, “moderate (means) justice. You (Muslims) will be called (on the day of judgment) as a witness for him (Nuh علیہ السلام) for conveying (the message of Allah) and I will be witness for you.(You also has conveyed the message further). (Tafseer Darul Mansoor)

Muslims are Moderate Nation Pdf free download

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *