Order of Divorcing in Purified Period Before Sexual Conduct

 الأمر بالطلاق في الطهر قبل أن يجامعها

Order of Divorcing in Purified Period Before Sexual Conduct

اس کا حکم کہ طلاق طہر میں دی جائے مباشرت سے پہلے

( Is ka Hukam K Talaq Tahar Main Di Jaye Mubashirat Se Pehle )

Order of divorcing in her purity purified, not is menstruations اس بات کا حکم کہ طلاق عورت کوطہر میں دی جائے نہ کہ حیض میں الأمر بالطلاق في طهرها لا في حيضها

Order of Divorcing in Purified Period Before Sexual Conduct
Hadith on Divorce (Talaq) of Allah
Translation in English, Arabic & Urdu


Hadith No 4916:- Nafeh narrates that, “Verily, (Abdullah) bin Umar bin Alkhatab Radi Allah a anhuma has divorced his wife with a single word of divorce while she was menstruating, so, Apostle ordered him to reconnect the relation with her then he should keep her with him until an other menstruation, then he should hold her until she has become purified from her menstruation , so, if he has made intention to divorce her, he may divorce her on the time of purification before sexual conduct. So, this is the counting, for that Allah has ordered to count for divorcing women.” Narrated Bukhari at no 4916 and Muslim at no 2676, 2677 and Nisay at no 3389 Sheikh Albany said, “Correct”, and Ahmad bin Hanbal at no 5164, 5792, 6061 and Ibn e Haban at no 4263 and narrations of both Taleek of Shoaib Alurnwoot is, “Chain of narrators is correct as per criteria of both sheikhs (Bukhari and Muslim).

عَنْ نَافِعٍ أَنَّ ابْنَ عُمَرَ بْنِ الْخَطَّابِ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا طَلَّقَ امْرَأَةً لَهُ وَهِيَ حَائِضٌ تَطْلِيقَةً وَاحِدَةً فَأَمَرَهُ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ أَنْ يُرَاجِعَهَا ثُمَّ يُمْسِكَهَا حَتَّى تَطْهُرَ ثُمَّ تَحِيضَ عِنْدَهُ حَيْضَةً أُخْرَى ثُمَّ يُمْهِلَهَا حَتَّى تَطْهُرَ مِنْ حَيْضِهَا فَإِنْ أَرَادَ أَنْ يُطَلِّقَهَا فَلْيُطَلِّقْهَا حِينَ تَطْهُرُ مِنْ قَبْلِ أَنْ يُجَامِعَهَا فَتِلْكَ الْعِدَّةُ الَّتِي أَمَرَ اللَّهُ أَنْ تُطَلَّقَ لَهَا النِّسَاءُ، رواہ البخاریؒ برقم 4916 والمسلمؒ برقم 2676، 2677 والنسائیؒ برقم 3389 قال الشيخ الألباني : صحيح واحمدبن حنبلؒ برقم 5164 ، 5792، 6061 وابن حبانؒ برقم 4263 وفی روایاتہما تعليق شعيب الأرنؤوط : إسناده صحيح على شرط الشيخين

ترجمہ ۔4916 – نافعؒ سے روایت ہے کہ بے شک (عبداللہ) ابن عمر بن الخطاب رضی اللہ عنہما نے طلاق دے دی اپنی بیوی کو اوروہ حائضہ تھی ایک طلاق سے، پس اسے حکم دیا رسول اللہ ﷺ نے کہ وہ اس سے (طلاق واقع ہونے پر) رجوع کرلے، پھر اس کو روکے رکھے یہاں تک کہ وہ پاک ہو جائے پھر اس کوشروع ہو جائے اس کے پاس ہی ایک اورحیض پھر اس کو روکے رکھے یہاں تک کہ وہ پاک ہو اپنے حیض سے پس اگر وہ ارادہ کرلے کہ اس کو طلاق دے گا تو اسے طلاق دے دے جب وہ پاک ہوجائے اس سے پہلے کی اس سے مباشرت کرے پس یہی وہ گنتی ہے جس کا اللہ نے حکم دیا ہے کہ طلاق دی جائےجس سے عورتوں کو، روایت کی ہے البخاریؒ نمبر 4916 پر اور مسلمؒ نے نمبر 2676، 2677 پر اورنسائیؒ نے نمبر 3389 پر کہاشیخ البانیؒ نے کہ صحیح ہے اوراحمدبن حنبلؒ نمبر 5164 ، 5792، 6061 اورابن حبانؒ نے نمبر 4263 پر اور دونوں کی روایات کے بارے تعلیق شعیب الارنؤوط کی ہے کہ اسناد اس کہ صحیح ہے شرط شیخین پر۔ 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *