Performing Ablution After Vomiting

الوضوء من القيء

Performing Ablution After Vomiting

قے ہونے پر نیا وضوء کرنا


Hadith about ablution with Translation in English, Urdu & Arabic


Hadith No 87: Abu Darda (Radi Allahu anhu) narrates, “Verily, Rasoolullah vomited, so, he performed ablution.” He said I met Soban (Radi Allah o anho) in the Masjid of Damascus, I discussed with him (about vomiting). He said, “he {Abu Darda (Radi Allahu anhu)} well, I managed the water (for ablution) to dispense over.” (Narrated Tirmizi and said, “It is the most correct narration”, and rest of the narrators quoted with text, “vomited and ceased his fast”, and Abu Dawood at no 2381, Sheikh Albani said about both, “Correct”, and Ibn Khuzayma at no 1956, Al Azmi said, “Chain of narrators is correct”, and Adarmy at no 1728, Hussain Slim Asad said, “Chain of narrators is correct”, and Ibn e Haban at 1097, Shoaib Alurnwoot said, “Chain of narrators is correct” and Ahmad bin Hanbal at no 21748, 22435, 27842 about all Taleek of Shoaib Alunwoot is, “Hadith is correct“.

عن أبي الدرداء : أن رسول الله صلى الله عليه و سلم قاء فتوضأ قال فلقيت ثوبان في مسجد دمشق فذكرت ذلك له فقال صدق أنا صببت له وضوءه ۔ (رواہ الترمذیؒ ورووہ باقون کلہم بلفظ “قاء فافطر” وابوداودؒ برقم 2381 وفیہما قال الشیخ البانیؒ صحیح، وابن خزیمۃؒ برقم 1956 قال الاعظمی اسنادہ صحیح، والدارمیؒ برقم 1728 قال حسین سلیم اسد اسنادہ صحیح، ابن حبانؒ برقم 1097 قال شعیب الارنؤوط اسنادہ صحیح واحمد بن حنبلؒ برقم 21748،22435، 27542 وفی کل تعلیق شعیب الارنؤوط حدیث صحیح)۔

ترجمہ ۔87 ابودرداء(رضی اللہ تعالیٰ عنہ) سے روایت ہے کہ، “بے شک رسول اللہ ﷺ نے قے کردی تو وضوء فرمایا” کہا کہ میں ملا ثوبان (رضی اللہ تعالیٰ عنہ) سے دمشق کی مسجد میں تومیں نے ان سے ذکر کیا اس ( قے آںے اور وضوء کرنے) کے بارے میں ، تو کہا (ابودرداء رضی اللہ تعالیٰ عنہ) نے سچ ہے، میں نے ہی ڈالا تھا رسول اللہ ﷺ کے لئے وضوء کا پانی “۔ (روایت کی ہے الترمذیؒ نے اور کہا کہ “یہ صحیح ترین روایت ہے”۔اور باقی تمام نے ان الفاظ سے روایت کی ہے “قے فرمادی اور روزہ افطار کردیا” اورابوداودؒ نے نمبر 2381 پر اوردونوں کی روایات کے بارے کہا الشیخ البانیؒ نے صحیح ہے اورابن خزیمۃؒ نے نمبر1956 پر کہا الاعظمی نے اسناد اس کی صحیح ہےاور الدارمیؒ نے نمبر 1728پر کہاحسین سلیم اسد نےاسناد اس کی صحیح ہے اور ابن حبانؒ نے نمبر 1097 پر کہا شعیب الارنؤوط نے اس کی اسناد صحیح ہےاوراحمد بن حنبلؒ نے نمبر21748،22435، 27542 پر اور سب کے بارے تعلیق شعیب الارنؤوط کی ہے کہ حدیث صحیح ہے)۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *