Purification of Clothes is Obligatory for Prayer

طهارة الثياب شرط في صحة الصلاة

Purification of Clothes is Obligatory for Prayer (Salat)

نماز کے لئے کپڑوں کا پاک ہونا شرط ہے


1st Hadith about Purification of Clothes with Translation in English, Urdu & Arabic


And purify your clothes (Al-Muddathir-4)

 أنس بن مالك يقول كان النبي صلى الله عليه وسلم إذا خرج لحاجته أجيء أنا وغلام معنا إداوة من ماء يعني يستنجي به (رواہ البخاریؒ وبرقم 147، 148، والنسائیؒ برقم 45،قال الشيخ الألباني : صحيح واحمدبن حنبلؒ برقم 12777 تعليق شعيب الأرنؤوط : إسناده صحيح على شرط الشيخين)۔

ترجمہ۔ اور آپ اپنے (مبارک) کپڑے پاک رکھا کریں (المدثر4)۔


2nd Hadith about How to Purify Clothes with Translation in English, Urdu & Arabic


And Muhammad Ibn Sirin said, “(and purify your clothes) means wash them (clothes) with water”, and Ibn e Zaid said, “Non-believers were not used to purify their clothes, So, Allah has ordered to purify (ourselves) and purify his clothes” (Ibn-Kathir 8/263) (Al-Muddathir-4)

وقال محمد بن سيرين: { وَثِيَابَكَ فَطَهِّرْ } أي: اغسلها بالماء.  وقال ابن زيد: كان المشركون لا يتطهرون، فأمره الله أن يتطهر، وأن يطهر ثيابه. (ابن کثیرؒ، 8/263)۔۔

ترجمہ۔  اور کہا محمد بن سیرینؒ نے {اور اپنے کپڑے پاک کرلیاکریں} یعنی دھو لیا کریں انہیں (اپنے کپڑے) پانی سے، اور کہا ابن زیدؒ نے، مشرکین اپنے کپڑے پاک نہیں کرتے تھے، پس حکم فرمایا اللہ تعالیٰ نے کہ پاکی حاصل کریں (باطنی اوربدنی) اور یہ کہ کپڑے بھی اپنے پاک رکھیں (ابن کثیرؒ 8/263)۔


3rd Hadith about Clothes Purification for Prayer with Translation in English, Urdu & Arabic


And the second meanings, should wash contamination that is visible, the correct opinion in this is of Almadwy, and our scholars has based their arguments upon this (verse) that purification of the clothes is obligatory (for prayer). Ibn Sirin and Ibn e Zaid said, “Do not offer salat but only in a purified clothes”, and Ashafee has based upon this (verse) that purification of clothes is obligatory. (Alkurtaby, 19/66)

والمعنى الثاني : غسلها من النجاسة وهو ظاهر منها ، صحيح فيها. المهدوي : وبه استدل بعض العلماء على وجوب طهارة الثوب ؛ قال ابن سيرين وابن زيد : لا تصل إلا في ثوب طاهر. واحتج بها الشافعي على وجوب طهارة الثوب (القرطبیؒ 19/66)۔

ترجمہ – اوردوسرے معنی یہ ہیں، کہ دھولیا جائے نجاست کو اور وہی ہے جو ظاہر میں لگی ہو، اوراس بارے میں صحیح بات المھدوی کی ہے، اور اسی (آیت) سے دلیل پکڑی ہے بعض علماء نے کہ کپڑوں کا پاک کرنا واجب ہے، کہا ابن سیرینؒ اورابن زیدؒ نے “مت نماز پڑھو مگر یہ کہ پاک کپڑے صرف میں”، اور اسی (آیت) سے حجت لی ہے امام الشافعیؒ نے کپڑوں کے پاک ہونے کے واجب ہونے پر۔ (القرطبیؒ 19/66)۔


4th Hadith about Purification with Translation in English, Urdu & Arabic


Az Zujaj and Taus said, “the third point is {and purify your clothes} (means) from contamination by using water.(Alkurtabi 19/65)

قال الزجاج وطاوس. الثالث : {وَثِيَابَكَ فَطَهِّرْ} من النجاسة بالماء (القرطبیؒ 19/65)۔

ترجمہ ۔ کہا الزجاجؒ اورطاوسؒ نے تیسری بات یہ ہے کہ “اور کپڑے اپنے پاک رکھا کریں” نجاست سے، پانی کے ساتھ (دھوکر)۔ (القرطبیؒ 19/65)۔


5th Hadith about Istinja with Translation in English, Urdu & Arabic


{and purify your clothes} means form all contamination because, purification of clothes is obligatory for a correct salat, and with that it is not possible.(Tafsir Al Siraj ul Munir 4/310)

وَثِيَابَكَ فَطَهِّرْ} أي : من النجاسات لأنّ طهارة الثياب شرط في صحة الصلاة لا تصح إلا بها. (السراج المنیر4/310)۔

ترجمہ – {اور اپنے کپڑے پاک کر لیا کریں} یعنی، نجاستوں سے بے شک کپڑوں کا پاک ہونا شرط ہے نماز کے صحیح ہونے کےلئے، (نماز) صحیح نہیں پاکی کے بغیر۔(السراج المنیر4/310)۔


6th Hadith about Purification in Islam with Translation in English, Urdu & Arabic


{and purify your clothes} it appears that clothes are required to be purified from contamination, because purification is obligatory for prayer and it is also ugly for a believer that his dress is contaminated (other than salat also) (Tafsir Bahr ul Muheet 8/278)

وَثِيَابَكَ فَطَهِّرْ} : الظاهر أنه أمر بتطهير الثياب من النجاسات ، لأن طهارة الثياب شرط في صحة الصلاة ، ويقبح أن تكون ثياب المؤمن نجسة ، (البحرالمحیط، 8/278)۔۔

ترجمہ – {اور اپنے کپڑے پاک کر لیا کریں} ظاہر ہے کہ بے شک کپڑوں کو پاک کرنا ہے نجاسات سے ، کیونکہ بے شک کپڑوں کا پاک ہونا شرط ہے نماز کے لئے، اور برا (قبیح) ہے کہ مؤمن کا لباس نجس ہو۔ (البحرالمحیط، 8/278)۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *