Residence and Expenditures For Divorced Women

السُّكْنَى وَالنَّفَقَةُ للمطلقات

Residence and Expenditures For Divorced Women

مطلقۃ عورتوں کے لئیے گھر اور خرچہ

( Mutalka Auratoun Ke liye Ghar aur Khercha )

Residence and Expenditures For Divorced Women


Divorce (Talaq) Translation in English, Arabic & Urdu


Saying of Allah, the Exalted, (O Prophet, when you divorce women, divorce them for their prescribed period, and calculate the period and fear Allah your Lord. 1 Attalaq)..means fear your Sustainer, He has created you (Expel them not from their houses nor let them go forth. 1 Attalaq) means from their houses in which they reside, and those are provided by their husbands in possession of the (divorced) women. (Umdat ul Qari part 30 page 246)

قوله تعالى (يا أيها النبي إذا طلقتم النساء فطلقوهن لعدتهن وأحصوا العدة واتقوا الله ربكم) ( الطلاق1 ) أي خافوا الله ربكم الذي خلقكم (ولا تخرجوهن من بيوتهن) أي من مساكنهن التي يسكنها وهي بيوت الأزواج وأضيفت إليهن لاختصاصها بهن من حيث السكنى۔۔۔(عمدۃ القاریؒ ج 30 ص 246)

ترجمہ ۔اللہ کا ارشاد( اے نبی ﷺ جب آپ طلاق دیں عورتوں کو تو ان کو طلاق دو ان کی عدت پراور گنتی کرو عدت کی اور اللہ سے ڈرتے رہو (جو) تمہارا رب ہے ) (1 الطلاق)۔۔ ۔۔ یعنی اللہ سے ڈروجو تمہارا رب ہے ، پیداکیا ہے اس نے تمہیں (اورنہ نکالو انہیں ان کے گھروں سے) یعنی ان کے مساکن (گھروں) سے جس میں وہ رہتی ہیں اور یہ ان بیگمات کے گھر جو ان کی ملکیت بتائے گئے بوجہ ان کے ساتھ خاص ہونے کے ان کا مسکن ہونے کی طورپرہے ۔۔۔ (عمدۃ القاریؒ ج 30 ص 246)


Divorce Translation in English, Arabic & Urdu


Allah, the Exalted has said (Lodge them (the divorced women) where you dwell, according to your means, and do not treat them in such a harmful way that they be obliged to leave. And if they are pregnant, then spend on them till they deliver (the babies) ….6 Attalaq)

قال اللہ تعالیٰ (أَسْكِنُوهُنَّ مِنْ حَيْثُ سَكَنْتُمْ مِنْ وُجْدِكُمْ وَلَا تُضَارُّوهُنَّ لِتُضَيِّقُوا عَلَيْهِنَّ وَإِنْ كُنَّ أُولَاتِ حَمْلٍ فَأَنْفِقُوا عَلَيْهِنَّ حَتَّى يَضَعْنَ حَمْلَهُنَّ۔۔۔۔6 الطلاق)

ترجمہ ۔ اللہ تعالیٰ نے ارشادفرمایا (اوران (مطلقہ ) عورتوں کو رہائش دو جہاں تم خود رہتے ہوں اپنی وسعت کے مطابق اوران کو ٖضرر (تکلیف) نہ دو تاکہ تنگی کرو (گھریا خرچ سے محروم کرکے) ان کے اوپر اوراگر ہوں وہ حمل والیاں تو خرچ کرو ان پر یہاں تک کہ وہ جَن لیں اپنے حَمل (پیٹ میں بچوں) کو۔۔۔6 الطلاق)


 Translation of Divorce (Talaq) in English, Arabic & Urdu


2179. Shaby has narrated hadith of Fatimah binte Qais that, “Verily, Apostle ﷺ did not sanction residence and expenditure (as a thrice divorced woman).” Aswad threw a handful of stones and said, “Sorry for you that you has narrated such hadith”. Umar (Radi Allah o anho) said, “We shall not leave the Book of Allah and way (Sunnah) of our Apostle ﷺ by listening the words of a woman. We don’t know, perhaps, she did remember or forgot about residence and expenditures for her. Allah the Exalted has said (Expel them not from their houses nor let them go forth unless they commit open immorality). Narrated Muslim at no 2719 and Darmy at no 2274 Hussain Salim Asad said, “Hadith is correct” and Trimzy at no 1180 Abu Eesa (Trimzy) said, “good Correct” and Shaikh Albany said, “Correct”.

فَحَدَّثَ الشَّعْبِيُّ بِحَدِيثِ فَاطِمَةَ بِنْتِ قَيْسٍ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ لَمْ يَجْعَلْ لَهَا سُكْنَى وَلَا نَفَقَةً ثُمَّ أَخَذَ الْأَسْوَدُ كَفًّا مِنْ حَصًى فَحَصَبَهُ بِهِ فَقَالَ وَيْلَكَ تُحَدِّثُ بِمِثْلِ هَذَا قَالَ عُمَرُ لَا نَتْرُكُ كِتَابَ اللَّهِ وَسُنَّةَ نَبِيِّنَا صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ (قولہ “سنۃ نبینا” فی حکم المرفوع) لِقَوْلِ امْرَأَةٍ لَا نَدْرِي لَعَلَّهَا حَفِظَتْ أَوْ نَسِيَتْ لَهَا السُّكْنَى وَالنَّفَقَةُ قَالَ اللَّهُ عَزَّ وَجَلَّ { لَا تُخْرِجُوهُنَّ مِنْ بُيُوتِهِنَّ وَلَا يَخْرُجْنَ إِلَّا أَنْ يَأْتِينَ بِفَاحِشَةٍ مُبَيِّنَةٍ } رواہ المسلمؒ بر قم 2719 و الدارمیؒ برقم 2274 قال حسين سليم أسد : حديث صحيح الترمذیؒ برقم 1180 قال أبو عيسى هذا حديث حسن صحيح و قال الشيخ الألباني : صحيح

ترجمہ ۔2719 –پس بیان کی حدیث الشعبی نے فاطمۃ بنت قیس (رضی اللہ عنہا) کی کہ بے شک رسول اللہ ﷺ نے ان کے لئیے گھر اور خرچہ (وغیرہ) نہیں متعین فرمایا، اسود نے ایک مٹھی کنکریاں لے کر ان (شعبی) پر پھینکیں، تو کہا افسوس ہے تم پر کہ تم ایسی حدیث بیان کرتے ہو، عمر (رضی اللہ عنہ) نے تو فرمایاکہ ہم نہیں ترک کریں گے اللہ کی کتاب کو اوراپنے نبی ﷺ کی سنت کو (عمر رضی اللہ کا قول کہ “اپنے نبی ﷺ کی سنت کو ” مرفوع روایت کے حکم میں ہے)، اس خاتون کے قول کی وجہ سے ہمیں نہیں معلوم کہ شاید اس نے یاد رکھا یا بھول گئی گھر اور خرچے کے بارے میں ،اللہ عزوجل نے ارشاد فرمایا { نہ نکالوان (مطلقہ خواتین کو) ان کےگھروں سے اورنہ ہی وہ خودہی نکل پڑیں مگر یہ کہ وہ کوئی بے حیائی کربیٹھیں واضح طورپر } روایت کی ہے مسلم نے نمبر 2719 پراور دارمیؒ نےنمبر 2274 پر کہا حسين سليم أسد نے کہ حدیث صحیح ہے اورروایت کی ہے ترمذیؒ نے نمبر 1180 پر کہا ابوعیسی (امام ترمذیؒ) نے کہ حسن صحیح ہے اورکہا شیخ البانیؒ نےکہ صحیح ہے۔


Hadith Translation of Divorce in English, Arabic & Urdu


2830. Amr bin Shoaib narrates from his father and he from his grand father that, a woman said, “O’ Apostle, this is my son, my belly was his container and my chest was a source of food for him and my lap was his residing place and his father haas divorced me and he has made intention to snatch him from me.” Apostle ﷺsaid to her, “You are deserving to wed with an other one”. Narrated Hakim at no 2830 and said, “This hadith is correct”…Taleek of Zahby in (his book) Attalkhees is, “Correct”.

عن عمرو بن شعيب عن أبيه عن جده عبد الله بن عمرو رضي الله عنه : أن امرأة قالت : يا رسول الله ابني هذا كان بطني له وعاء و ثديي له سقاء و حجري له حواء و أن أباه طلقني و أراد أن ينتزعه عني قال لها رسول الله صلى الله عليه و سلم : أنت أحق به ما لم تنكحي”رواہ الحاکمؒ برقم 2830 وقال هذا حديث صحيح الإسناد ۔۔۔تعليق الذهبي قي التلخيص : صحيح

ترجمہ -2830 – عمروبن شعیب اپنے والد سے وہ ان کے دادا عبداللہ بن عمرو رضی اللہ عنہ سے روایت کرتے ہیں ، کہ “ایک عورت نے عرض کی یارسول اللہ (ﷺ) میرایہ بیٹا، میراپیٹ اس کا برتن (ٹھرنے کی جگہ) تھا میری چھاتیاں اس کے لئیے پینے کاذریعہ تھا اور میری گود اس کی آباد ہونے (رہنے) کی جگہ (محلہ، بستی) تھی اوراس کے ابا نے مجھے طلاق دے دی اوراس نے ارادو کرلیا ہے کہ اس کو چھین لےمجھ سے، ارشاد فرمایا اس سے رسول اللہ ﷺ نے ، تو اس کی حق دار ہے کہ جب تک تو (کسی اورسے) نکاح نہ کرلے “روایت کیاہے اس کو حاکمؒ نے نمبر 2830 پر اور کہا کہ یہ حدیث صحيح الإسناد ہے۔۔۔تعلیق ذہبیؒ کی التلخیص میں ہے کہ صحیح ہے

 

Related Topics:

Divorce During Menstruation

Divorce of Permanent Separation

What is the Meaning of Divorce in Islam

Is Divorce Valid During Menstruation in Islam

Order of Divorcing in Purified Period Before Sexual Conduct

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *