Taking Bath on Seminal Emission

الاغتسال من الجنابۃ

Taking Bath on Seminal Emission

جنابت ہونے پر غسل کرنا


1st Hadith about Bath (Ghusl) with Translation in English, Urdu & Arabic


Abd bin Humaid narrates from Qatadah, about the saying of Allah {If you experience a seminal discharge, manage to take (the required) bath, Al Maidah 6 } says, “Take a bath“. and Ibn e Abi Shaybah narrates from Ibn e Umar (Razi Allah o anho) that, “We were with Rasoolullah ﷺ , a man (Jibreel AS) came to him with nice dress…..and asked, O, Rasoolullah ﷺ , what is Islam? He answered, “Establish salat, and pay Zakat (obligatory charity) and perform Hajj of the Home of Allah, and take bath when you are seminally discharged”. He said, “You have pronounced correct”…(Tafseer Dur al manthoor) and Ibn e Haban also narrated from him (Ibn e Umar Razi Allah o anho) at no 173, that, “You should take bath on seminal discharge, and perform complete ablution”. Shoaib Alurnwoot said, “Chain of narrators is correct”.

أخرج عَبد بن حُمَيد عن قتادة في قوله {وإن كنتم جنبا فاطهروا} يقول : فاغتسلوا. وأخرج ابن أبي شيبة عن ابن عمر قال كنا عند رسول الله صلى الله عليه وسلم فأتاه رجل جيد الثياب ۔۔۔وقال : يارسول الله ماالاسلام قال : تقيم الصلاة وتؤتي الزكاة وتصوم رمضان وتحج إلى بيت الله الحرام وتغتسل من الجنابة قال : صدقت ،۔۔تفسیر الدالمنثور) ورواعنہ ابن حبانؒ برقم 173 بلفظ “وتغتسل من الجنابة وأن تتم الوضوء” قال شعيب الأرنؤوط : إسناده صحيح ۔

ترجمہ۔ عبدبن حمید نے تخریج کی ہے قتادۃ سے اس (اللہ) کے قول کے بارے میں {اوراگرتم جنابت کی حالت میں ہو تو خوب پاکی حاصل کرو} کہتے ہیں (قتادۃ آیت کامفہوم بتاتے ہوئے) پس غسل کرو. اورابن ابی شیبۃؒ نے روایت کی ہے ابن عمر (رضی اللہ تعالیٰ عنہ) سے،کہ “ہم تھے رسو ل اللہ ﷺ کے ہاں تو ایک شخص (جبر یل علیہ السلام) آگیا ان کے پاس عمدہ کپڑے پہنے ۔۔۔۔اور کہا اے اللہ کے رسول () اسلام کیا ہے؟ ارشاد فرمایا کہ تو نماز قائم کرے اور ادا کرے زکوۃ اور اللہ کے محترم گھر کا حج کرے اور غسل کرے جنابت سے ، کہا، آپ نے سچ فرمایا”۔۔۔ (تفسیر الدالمنثور) اور انہی (ابن عمررضی اللہ عنہ) سے روایت کی ہے ابن حبانؒ نے نمبر 173 پر ان الفاظ سے “کہ تو جنابت کا غسل کرے اور(پہلے) کامل وضوء کرے” شعیب الارنؤوط نے کہا اسناد اس کی صحیح ہے۔


2nd Hadith about Bath (Ghusl) with Translation in English, Urdu & Arabic


Hadith No 241: Memoonah (Radi Allah o anha) wife of Holy Prophet ﷺ narrates that, “Rasoolullah ﷺ performed ablution like his ablution of salat but only left his feet, then he washed his private organs and (washed) contamination contacted him, then he dispensed water upon him, and displaced his feet from the bathing area and washed his feet. It was bath of Janabat”. (Al-bukhari narrated, and at no 252, 257, 258, 272 and Tirmizi, at no 103 abd Anisay at no 428 and Abu Dawood at no 245 and all three, Sheikh Albani said, “Correct”, and Ahmad bin Hanbal at no 26899 , 26866 and about both Taleek of Shoaib Alurnwoot is, “Chain of narrators is correct as per criteria of both Sheikhs (Bukhari and Muslim).

عن ميمونة زوج النبي صلى الله عليه وسلم قالت توضأ رسول الله صلى الله عليه وسلم وضوءه للصلاة غير رجليه وغسل فرجه وما أصابه من الأذى ثم أفاض عليه الماء ثم نحى رجليه فغسلهما هذه غسله من الجنابة (رواہ البخاریؒ وبرقم ،252، 257 ،258، 267، 272 والترمذیؒ برقم 103 والنسائیؒ برقم 428،وابوداودؒ برقم 245 وفی الثلاثۃ قال الشیخ البانیؒ صحیح، واحمد بن حنبلؒ برقم 26899، 26866 وفی کلیہما تعليق شعيب الأرنؤوط : إسناده صحيح على شرط الشيخين)، ۔

ترجمہ۔  241میمونۃ (رضی اللہ تعالیٰ عنہا) زوجہ نبی ﷺ سے روایت ہے کہا کہ، “رسول اللہ ﷺ نے وضوء فرمایا اپنے نماز کے وضوء کی طرح بغیر اپنے دونوں (مبارک) پاؤں (دھونے) کے، اوراپنی شرم گاہ کو دھویا اورجو لگ گئی تھی نجاست انہیں (وہ بھی دھولی)، پھر بہایا اپنے اوپر پانی پھر اس جگہ سے ہٹ کر اپنے دونوں (مبارک پاؤں) دھو دئیے، یہ تھا غسل جvنابت” (روایت کی ہے البخاریؒ نے، اور نمبر 252، 257 ،258، 267، 272 پر اورالترمذیؒ نے نمبر 103 پراور النسائیؒ نے نمبر 428 پر اورابوداودؒ نے 245 پراورتینوں کے بارے کہا الشیخ البانیؒ نے صحیح ہے اوراحمد بن حنبلؒ نے نمبر 26899، 26866 پر اوردونوں کے بارے تعليق شعيب الأرنؤوط کی ہے کہ اسناداس کی صحیح ہے شرط الشيخين (بخاریؒ اورمسلمؒ) پر،۔


3rd Hadith about Bath (Ghusl) with Translation in English, Urdu & Arabic


Hadith No 500: Ayesha (Razi Allah o anha) narrates about Asma (Radi Allah o anha) that (Rasoolullah ﷺ was teaching her bath of Janabah) you should take water, and purify yourself in a best way, then dispense water at your head and rub it so that water may reach in roots of the hair, and then dispense water upon you.” (Narrated Al-Muslim and Abu Dawood at no 314, Sheikh Albani said, “Good and correct”, and Ahmad bin Hanbal at no 25188, 25592 and about both Taleek of Shoaib Alurnwoot is, “Hadith is correct”.

عَنْ عَائِشَةَ أَنَّ أَسْمَاءَ سَأَلَتْ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ ۔۔۔۔عَنْ غُسْلِ الْجَنَابَةِ فَقَالَ تَأْخُذُ مَاءً فَتَطَهَّرُ فَتُحْسِنُ الطُّهُورَ أَوْ تُبْلِغُ الطُّهُورَ ثُمَّ تَصُبُّ عَلَى رَأْسِهَا فَتَدْلُكُهُ حَتَّى تَبْلُغَ شُؤُونَ رَأْسِهَا ثُمَّ تُفِيضُ عَلَيْهَا الْمَاء۔۔۔۔ (رواہ المسلمؒ وابوداودؒ برقم 314 قال الشیخ البانیؒ حسن صحیح، اوراحمد بن حنبلؒ برقم 25188، 25592 وفی کلیہما تعلیق شعیب الانؤوط، حدیث صحیح)۔

ترجمہ – 500عائشۃ (رضی اللہ عنہا) سے روایت ہے کہ بے شک پوچھا اسماء (رضی اللہ عنہا ) نبی ﷺ سے ۔۔۔۔غسل جنابت کے بارے میں (کہ کیسے کروں)؟ تو ارشاد فرمایا توپانی لے اورخوب احسن طریقے سے پاکی حاصل کر یا پاکی حاصل ہوجائے تمہیں (منی وغیرہ سے)، پھر اپنے سر پر پانی ڈال کر خوب مل تا کہ (پانی) سر (کے بالوں) کی جڑوں میں پہنچ جائے ،پھر اپنے اوپر (سارے جسم پر) پانی بہا لے”۔۔۔۔ (روایت کی مسلمؒ نے اور ابوداود نے نمبر 314 پر کہا الشیخ البانیؒ نے حسن صحیح ہے اوراحمد بن حنبلؒ نے نمبر 25188، 25592پر دونوں کے بارے تعلیق شعیب الارنؤوط کی ہے کہ حدیث صحیح ہے۔

 

Related Topics:

When Bath Becomes Obligatory

Ghusl Janabat for Female with Braided Hair

The Sexually Discharge Spoils Stored Water

Take A Bath After Menstruation Period in Islam

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *