Timing of Fajr and Asr Prayer

رؤیت اللہ سبحانہ وتعالیٰ وقت صلاۃ الفجر والعصر

Timing of Fajr and Asr Prayer

فجر اور عصر کے وقت نماز ادا کرنا


Hadith about Timing of Prayers (Salah) with Translation in English, Urdu & Arabic


Hadith No 521:- Jareer bin Abdullah (Radi Allah) narrated and said, “We were with Apostle ﷺ (once) when he saw towards moon of the fortnight,” and said, “verily, you will see your Sustainer as you are looking at this moon without any difficulty. If you can say salah and there is no any disability, that may hamper, you should do so (perform salat) before sunrise and before sunset and recited (the verse) { وَسَبِّحْ بِحَمْدِ رَبِّكَ قَبْلَ طُلُوعِ الشَّمْسِ وَقَبْلَ الْغُرُوبِ (سورۃ طہ)} Narrated Al-Bukhari at no 521, 4473 and shortly, at no 6882, 6884 and Al-Muslim at no 1002 and Al-Tirmizi at no 2551 and shortly at no 2554 and Ibn e Majah at no 177 and about narrations of both Sheikh Albani said, “Correct”, and Ahmad bin Hambal at no 19213 and Ibn e Haban at no 7442, 7443, 7444 and about narrations of both Taleek of Shoaib Alurnwoot is, “Chain of narrators is correct as per criteria of both Sheikhs (Al-Bukhari and Al-Muslim).

 عَنْ جَرِيرِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ قَالَ كُنَّا عِنْدَ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَنَظَرَ إِلَى الْقَمَرِ لَيْلَةً يَعْنِي الْبَدْرَ فَقَالَ إِنَّكُمْ سَتَرَوْنَ رَبَّكُمْ كَمَا تَرَوْنَ هَذَا الْقَمَرَ لَا تُضَامُّونَ فِي رُؤْيَتِهِ فَإِنْ اسْتَطَعْتُمْ أَنْ لَا تُغْلَبُوا عَلَى صَلَاةٍ قَبْلَ طُلُوعِ الشَّمْسِ وَقَبْلَ غُرُوبِهَا فَافْعَلُوا ثُمَّ قَرَأَ { وَسَبِّحْ بِحَمْدِ رَبِّكَ قَبْلَ طُلُوعِ الشَّمْسِ وَقَبْلَ الْغُرُوبِ }رواہ البخاریؒ برقم 521، 4473و مختصرا برقم 6882، 6884 والمسلمؒ برقم 1002 والترمذیؒ برقم 2551 و مختصرابرقم 2554 وابن ماجہؒ 177 وفی روایاتہما قال الشیخ البانیؒ صحیح واحمدبن حنبلؒ برقم 19213 وابن حبانؒ 7442، 7443، 7444 وفی روایاتہما تعلیق شعیب الارنؤوط، اسنادہ صحیح علی شرط الشیخین۔

ترجمہ۔ 521 –  جریربن عبداللہ (رضی اللہ تعالیٰ عنہ) سے روایت ہے کہا کہ، “ہم تھے نبی ﷺ کے پاس (ایک دن) پس آپ نے دیکھا چاند کی طرف رات میں یعنی چوہدویں کا چاند”، تو ارشاد فرمایا، “بے شک تم عنقریب دیکھو گے اپنے رب کو (آخرت میں) جیسا کہ تم دیکھتے ہو اس چاند کو بغیرکسی زحمت کے اس کے دیکھنے میں ، پس اگر تم قدرت رکھتے ہو نماز پڑھنے کی کہ کوئی چیزتمہیں عاجز نہ کرسکے (کوئی سخت بیماری وغیرہ) تو سورج طلوع ہونے سے پہلے (فجر) اور سورج غروب ہونے سے پہلے (عصر) تم ضرورایساکرو (نماز پڑھو) پھر یہ (آیت) پڑھی{اور آپ تسبیح بیان کیجئیے ساتھ اپنے رب کی حمد کے طلو ع آفتاب سے پہلے اور غروب (آفتاب) سے پہلے (سورۃ طہ)} روایت کی ہے البخاریؒ نے نمبر 521 پر اور4473پر اور اختصار سے نمبر6882، 6884 پراورالمسلمؒ نے نمبر 1002 پر اورالترمذیؒ نےنمبر 2551 پر اوراختصار سے نمبر 2554 پر اورابن اجہؒ نے نمبر 177 پر اور دونوں کی روایات کے بارے کہا الشیخ البانیؒ نے کہ صحیح ہے اوراحمدبن حنبلؒ نے نمبر 19213 پر اورابن حبانؒ نے نمبر 7442، 7443، 7444 پر اور دونوں کی روایات کے بارے تعلیق شعیب الارنؤوط کی ہے کہ اسناد اس کی صحیح ہے شیخین (بخاریؒ اور مسلمؒ) کی شرط پر۔

 

Related Topics:

Advantages of Prayer Offered in Time

Virtues of Friday Prayer (Salatul Jumuah)

Etiquettes of Friday Prayer (Salatul Jumuah)

Purification of Clothes is Obligatory for Prayer

Can an Adult Woman Perform Prayer without Covering

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *