Witnessing Allah is specified for Muhammad ﷺ | Mustadrak Hakim

 الرؤية مخصوص لمحمد صلى الله عليه و سلم

اللہ تعالیٰ کا دیدار کرنا محمد کے لئے مخصوص ہے

Witnessing Allah is specified for Muhammad


Hadith in Arabic


عن ابن عباس رضي الله عنهما قال : أتعجبون أن يكون الخلة لإبراهيم و الكلام لموسى و الرؤية لمحمد صلى الله عليه و سلم ۔ هذا حديث صحيح على شرط البخاري و لم يخرجاه۔ و له شاهد صحيح عن ابن عباس في الرؤية ۔ تعليق الذهبي قي التلخيص : على شرط البخاري


Urdu Translation


حضرت ابن عباس رضی اللہ تعالیٰ عنہما سے روایت ہے کہ فرمایا ، ” کیا تم تعجب کرتے ہو کہ کہ (مخصوص) ہو خلیل ہونا (اللہ تعالیٰ کا )واسطے ابراہیم (علیہ السلام ) کےاور کلام کرنا (اللہ تعالیٰ سے) واسطے موسی ٰ (علیہ السلام) کےاور دید ار کرنا( اللہ تعالیٰ کا) واسطے محمد کے؟” ۔(امام حاکم ؒ نے کہا)یہ حدیث صحیح ہے بخاری ؒ کی شرط پر اور اس کی روایت نہیں کی دونوں (بخاری ؒ ومسلمؒ) نے اور اس (روایت ) کا ایک شاہد بھی صحیح (روایت میں موجود ہے) ابن عباس (رضی اللہ تعالیٰ عنہ) سے دیدار (الٰہی ) کے بارے میں ،تعلیق امام الذہبی ؒ کی تلخیص میں ہے ، کہ (یہ روایت )بخاری ؒ کی شرط پر ہے۔   المستدرک ، امام حاکم ؒ


English Translation


Ibn e Abbas (Radi Allahu Unho) narrates, “Is this amazing for you that Ibrahim (Alaihissalam) was specified for being Khalil (comrade to Allah) and specified for conversation (with Allah) Musa (Alaihissalam) and specified for witnessing (Allah) Muhammad . (Imam Hakim said) this hadith is correct according to the criteria of Imam Bukhari and they both (Bukhari and Muslim) did not narrate it and there is a witness also another true narration seconding the narration from Ibn e Abbas (Radi Allahu Unho). Imam Azzahby (a scholar) says in Talkhees that (this narration) is in accordance with the criteria of Bukhari. (Al-Mustadrak Hakim)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *